پاکستانی خبریںسٹوریمتحدہ عرب امارات

پاکستانی تاجر دبئی میں سب سے بڑے ٹریولر کروز شپ کا مالک کیسے بنا

(خلیج اردو ) پاکستان سے تعلق رکھنے والا تاجر جنت افریری جو دبئی میں سب سے بڑے ٹریولر کروز شپ کا مالک ہے جس میں 4 سو افراد کو ایک ساتھ بٹھایا جا سکتا ہے ۔ کروز شپ دبئی مرینا میں ہوٹل کے طور پر استعمال کیا جاسکتا ہے جس میں لوگوں کو تفریخ کے لئے دبئی میں گھمایا جاتا ہے ۔

جنت افریدی کے بر دبئی میں نو مزید کروز شپ بھی ہے جو جو سیاخوں کے لئے دستیاب ہوتی ہے اور جنت افریدی اپنا روزگار چلا رہے ہیں ۔
جنت افریدی کا تعلق درہ آدم خیل سے ہیں اور پچھلے کہی سالوں سے دبئی میں ٹورزم کمپنی چلا رہے ہیں ۔ جنت افریدی کا ڈیزرٹ سفاری میں کیمپ بھی ہے جو سیاخوں کو تفریخ فراہم کرنے کا بہترین ذریعہ ہے ۔

جنت افریدی دبئی اور پاکستان میں پراپرٹی کاروبار بھی کرتے ہیں اور جنت ہوم کے نام سے ایک پراجیکٹ بھی لانچ کیا ہوا ہے۔ جنت ہوم پراجیکٹ کے لئے 11،12،13 ستمبر کو جنت کروز میں تقریب کا اہتمام بھی کیا گیا ہے جس میں پاکستان اور متحدہ عرب امارات سے افراد کو شرکت کی دعوت دی گئی ہے ۔

جنت افریدی نے خلیج اردو کو بتایا ہے کہ میں بطور عام مزدور متحدہ عرب امارات نوکری کے لئے آیا تھا اور میرے والد یہاں ٹریلر چلاتے تھے ۔ مینے بھی عام مزرودری کے بعد لائسنس لیا اور کام شروع کردیا ۔

پہلے مینے ڈرائیونگ کی اور ایک موٹر کار خریدی پھر ایک سے دو اور سلسلہ شروع ہوگیا ۔ 2010 سے پہلے میں اپنی رینٹ اے کار کمپنی کا مالک بنا مگر بخران کی وجہ سے میری کمپنی ڈوب گئی اور ٹیکسیوں کا ٹھیکہ حکومت نے اٹھا لیا ۔

جنت افریدی نے کہا کہ میں نے ہمت نہ ہاری اور کام کرتا رہا ۔ پھر میں نے ٹریولر ایجنٹ کا لائسنس لیا اور اپنی کمپنی قائم کی ۔ وہاں سے پھر میرا کاروبار شروع ہوگیا اور اب تک جاری ہے ۔
میرے پاس متحدہ عرب امارات کا سب سے بڑا ٹریولر کروز شپ ہے اور نو کروز شپ مزید ہے جو لوگوں کو کرایہ پر دیتا ہوں ۔

کروز شپ کا اتنے بڑے ہیں کہ 4 کمرے اس میں ہوتے ہیں ۔
جنت افریدی نے پاکستانیوں کو مشورہ دیا کہ دبئی میں ایک جگہ بیٹھنے سے بہتر ہے کہ اپنے ملک کے لوگوں سے روابط بنائے رکھے اور مواقع کے حصول میں رہے ۔ جنت افریدی نے کہا کہ مذہب سے لاگو بنائے رکھے اور محبت جاری رکھے تو کامیابی یقینی ہوگی ۔

متعلقہ مضامین / خبریں

Back to top button