سپورٹس

مانچسٹر یونائیٹڈ کی فروخت ایک اچھا اقدام ہو سکتا ہے، منیجر فرنچائیز

خلیج اردو

مینیجر ایرک ٹین ہیگ نے کہا کہ گلیزر فیملی کا مانچسٹر یونائیٹڈ کو فروخت کرنے کا فیصلہ اچھی بات ہو سکتی ہے اور انہیں یقین دلایا گیا ہے کہ ملکیت میں کسی بھی تبدیلی سے کلب کے مقاصد، اہداف اور ثقافت پر کوئی اثر نہیں پڑے گا۔

 

گزشتہ ماہ یونائیٹڈ کے یو ایس مالکان نے کلب خریدنے کے 17 سال بعد 20 بار انگلش چیمپئنز کے لیے آپشنز تلاش کرنا شروع کیے۔

متعلقہ مضامین / خبریں

 

کلب کے شائقین ملکیت کی تبدیلی کا دعویٰ کر رہے ہیں اور گلیزرز شدید تنقید کا نشانہ بنے ہیں، کیونکہ ٹیم – جس کے پاس ریکارڈ 13 پریمیئر لیگ ٹائٹل ہیں – ٹرافی جیتے بغیر پانچ سال گزر چکے ہیں۔

 

ایرک ٹین ہیگ نے کہا کہ اس نے مالکان سے بات نہیں کی ہے بلکہ اس کے بجائے یونائیٹڈ کے سی ای او رچرڈ آرنلڈ سے منصوبوں پر بات کی ہے۔

 

ٹین ہیگ نے سپین میں یونائیٹڈ کے تربیتی کیمپ میں صحافیوں کو بتایا میری معلومات یہ ہے کہ یہ صرف اچھی چیزیں ہوں گی کیونکہ وہاں زیادہ سرمایہ کاری ممکن ہوگی جو کہ اچھی بات ہے۔

 

ہم نے اس ثقافت کے بارے میں بات کی جو ہم چاہتے ہیں ہم نے مقاصد اہداف اور ثقافت کے بارے میں بات کی اور انہوں نے تصدیق کی کہ یہ تبدیل نہیں ہوگا یہ اور بھی بہتر ہوگا کیونکہ اس پروجیکٹ کے لیے مزید رقم دستیاب ہوگی۔

 

ٹین ہیگ نے کہا کہ یونائیٹڈ کو صرف پریمیئر لیگ میں برقرار رکھنے کے لیے سرمایہ کاری کی ضرورت ہے اور یہ ضروری ہے کہ فنڈز کو سمجھداری سے خرچ کیا جائے۔

 

Source: Khaleej Times

متعلقہ مضامین / خبریں

Back to top button