متحدہ عرب امارات

کیا دبئی میں لینڈ کرنے کے بعد ابوظہبی جانے والوں کو 14 دنوں کے لیے قرنطینہ کیا جائے گا؟

خلیج ارو آن لائن:
متحدہ عرب امارات میں کورونا وبا کے پھیلاؤ کے بعد زندگی معمول کی طرف آ رہی، لیکن زندگی کا معمول کی طرف لوٹنا کورونا کے پھیلاؤ کو روکنے کے بنائی گئی احتیاطی تدابیر پر عمل کے ساتھ مشروط ہے۔

متحدہ عرب امارات میں حکام نے ملک کے اندر موجود رہائشیوں اور بیرون ملک سے آنے والے سیاحوں اور رہائشیوں کے لیے احتیاطی تدابیر تیار کی ہیں اور عوام کے لیے ان ایس او پیز پر عمل لازم قرار دیا گیا۔

بیرون ملک سے یو اے ای آںے والے کے لیے مختلف شرائط نافذ کی گئی ہیں، جن میں سے ایک یو اے ای آنے پر قرنطینہ کیا جانا ہے۔ لیکن یو اے ای آنے تمام مسافروں کے  لیے قرنطینہ سے متعلق قواعد میں فرق ہو سکتا ہے۔  اور یو اے ای کی مختلف امارات میں بھی بیرون ملک سے آںے والے افراد کے لیے قرنطینہ سے متعلق قواعد مختلف ہیں۔

جیسا کہ بیرون ملک سے دبئی آںے والے رہائشی اگر کورونا کے پی سی آر ٹیسٹ کی منفی رپورٹ دیکھاتے ہیں تو انہیں 14 دن کے لیے قرنطینہ نہیں کیا جاے گا۔ جبکہ دیگر امارات میں آنے والوں کو 14 دن کے لیے قرنطینہ کیا جائےگا۔

اور یہی قواعد و ضوابط یو اے آنے والے وزٹرز کے لیے ہیں۔

تاہم نجی خبررساں ادارے گلف نیوز کے ایک قاری نے ادارے کو سوال کیا کہ”میں اس وقت دبئی میں وزٹ ویزے پر ہوں اور کچھ دوستوں سے ملنے کے لیے ابوظہبی جانا چاہتا ہوں۔ اگر میں دبئی میں کورونا کے پی سی آر ٹیسٹ  کی منفی رپورٹ حاصل کرلوں تو کیا مجھے ابوظہبی میں داخل ہونے پر 14 روز کے لیے قرنطینہ کیا جائے گا؟”

جواب: یو اے ای کے نیشنل ایمرجنسی کرائسز مینجمنٹ کے اداراے این سی ای ایم اے نے ایک ہاٹ لائن (WEQAYA) قائم کی ہے جس سے لوگ کورونا ایس اوپیز سے متعلق تازہ ترین ہدایات اور معلومات حاصل کر سکتے ہیں۔

اس ہاٹ لائن (800) کے مطابق ابوظہبی میں داخل ہونے والے تمام وزٹرز کو 14 دنوں کے لیے قرنطینہ کیا جائے گا، بیشک کوئی وزٹر پہلے دبئی میں لینڈ ہوا ہو یا نہیں۔

قرنطینہ قوانین کی خلاف ورزی کی صورت میں کتنا جرمانہ ہوگا؟

2020 کی قرار داد نمبر 38 کے مطابق گھر میں قرنطینہ کے قواعد کی خلاف ورزی کرنے والے شخص پر 50 ہزار درہم جرمانہ عائد کیا جائے گا۔

اس بھاری جرمانے کو نافذ کرنے کا مقصد کورونا کے پھیلاؤ کو روکنا ہے۔

Source: Gulf News

متعلقہ مضامین / خبریں

Back to top button