عالمی خبریں

ناقص ہیٹر کی وجہ سے کمرے میں گیس بھرنے سے الجزائر میں 17 افراد ہلاک ہو گئے ہیں

خلیج اردو
الجزائر: الجزائر میں رات گئے کاربن مونو آکسائیڈ کی زہریلی گیس بھر جانے سے 17 افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔ ریسکیو حکام کے مطابق درجہ حرارت میں کمی کی وجہ سے لوگ مہلک گیس کا اخراج کرنے والے ہیٹر کے استعمال پر مجبور ہو گئے ہیں۔

سول ڈیفنس ایجنسی نے اپنی فیس بک پر بتایا کہ ایک ہی خاندان کے نو افراد ایک جوڑا، ان کے پانچ بچے اور دو رشتہ دار ہلاک ہوگئے ہیں۔ واقعہ الجزائر سے تقریباً 250 کلومیٹر جنوب میں بو سعدہ شہر میں متائثرہ کے گھر سے پائے گئے۔

ایجنسی نے بتایا کہ شمال مشرقی صوبے سیٹیف میں، ایک جوڑے اور ان کے چار بچے بھی بظاہر اپنے ہیٹر سے زہریلے دھوئیں میں سانس لینے کے بعد راتوں رات مردہ پائے گئے۔

سروس نے مزید کہا کہ شمال مغربی شہر مستگنیم میں دو دیگر افراد کا دم گھٹ گیا۔تمام اموات کی وجہ کاربن مونو آکسائیڈ کے زہر سے ہوئی ہے۔

متعلقہ مضامین / خبریں

حالیہ دنوں میں پورے شمالی افریقہ میں گرتے ہوئے درجہ حرارت نے لوگوں کو ہیٹر استعمال کرنے پر مجبور کیا ہے جو قدرتی گیس یا مائع ایندھن کو جلاتے ہیں اور کاربن مونو آکسائیڈ خارج کرتے ہیں، جو کہ ایک بو کے بغیر اور ممکنہ طور پر مہلک گیس ہے۔

الجزائر کی ہنگامی خدمات نے خبردار کیا ہے کہ وینٹیلیشن کی کمی، ناقص ہیٹر، دیکھ بھال کی کمی یا ایسے آلات کا استعمال جن کا مقصد ہیٹنگ نہیں ہے، کاربن مونو آکسائیڈ زہر اور موت کا سبب بن سکتا ہے۔

Source: Khaleej Times

متعلقہ مضامین / خبریں

Back to top button