عالمی خبریں

بطور احتجاج عالمی مقابلے میں شرکت کے وقت نقاب نہ پہننے والی ایرانی کوہ پیما خاتون کا گھر مسمار کر دیا گیا

خلیج اردو
تہران: ایران میں بطور احتجاج نقاب نہ پہننے والی خاتون کوہ پیما جس نے عالمی مقابلوں میں حصہ لیتے وقت ماسک نہیں پہنا تھا، کا گھر مسمار کردیا گیا ہے۔ رپورٹس کے مطابق ایرانی کوہ پیما الناز رکابی نے رواں سال اکتوبر میں جنوبی کوریا میں کوہ پیمائی کے عالمی مقابلے میں بغیر حجاب شرکت کی تھی۔

بغیر حجاب کے منقابلے میں حصہ لینے پر ایران میں مہسا امینی کی ہلاکت پر احتجاج کرنے والے مظاہرین نے انہیں سراہا تھا اور ہیرو قرار دیا تھا تاہم خاتون کوہ پیما نے وطن واپسی پر اپنے عمل پر معافی بھی مانگی تھی۔

تازہ ترین صورت حال کے مطابق سوشل میڈیا پر وائرل ایک ویڈیو میں خاتون کوہ پیما کا گھر گراتے ہوئے دیکھایا گیا ہے اور اس ویڈیو میں الناز کے ایتھلیٹ بھائی بھی روتے نظر آئے۔مقامی میڈیا کا کہنا تھا کہ الناز رکابی کی فیملی کے پاس گھر کی تعمیر کا پرمٹ نہیں تھا جس کے باعث مکان گرایا گیا۔

یاد رہے کہ ایران میں پولیس کی زیرحراست 22 سالہ خاتون مہسا امینی دل کا دورہ پڑنے سے 16ستمبر کو انتقال کرگئی تھیں۔ مرحولہ کو تہران میں اسکارف نہ پہننے پر حراست میں لیا گیا تھا۔

متعلقہ مضامین / خبریں

اس ہلاکت کے بعد ایران کے مختلف شہروں میں مظاہرے جاری ہیں اور مظاہرین کا مطالبہ ہےکہ حجاب پر پابندی اور خواتین کے خلاف تشدد و امتیازی قوانی کو ختم کیا جائے۔

ایران میں انسانی حقوق گروپ کے مطابق مہسا امینی کی ہلاکت پر احتجاج کرنے والے مظاہرین کے خلاف کریک ڈاؤن میں 448 افراد ہلاک ہوچکےہیں جبکہ ایرانی فوجی حکام نے مظاہروں میں300 سے زائد افراد کی ہلاکت کی تصدیق کی ہے۔

Source: Khaleej Times

متعلقہ مضامین / خبریں

Back to top button